106

ایودھیا: رام مندر کی تعمیر کے لئے ڈیڑھ مہینے میں3400 کروڑ روپے کے عطیات

ایودھیا 30 ’جون۔- یوپی کے ایودھیا میں رام مندر کی تعمیر کے لیے عطیات کی بارش ہو رہی ہے۔ گزشتہ ڈیڑھ ماہ میں 3400 کروڑ روپے کے عطیات آئے ہیں۔ مندر کی تعمیر کے لیے اب تک 5500 کروڑ روپے جمع ہو چکے ہیں۔

عطیہ کی گئی رقم حکومت ہند کے میڈ ڈے میل کے ایک سال کے بجٹ کا نصف ہے۔ شری رام جنم بھومی تیرتھ چھیترا ٹرسٹ کے مطابق، اس سال 15 جنوری سے 27 فروری کے درمیان ایک خصوصی مہم کے دوران جمع کی گئی رقم میں سے 3,400 کروڑ روپے خیراتی کام کے لیے آئے ہیں۔

آر ایس ایس کے ایک رکن پرکاش گپتا جو ٹرسٹ کا دفتر چلاتے ہیں، نے ایودھیا میں نامہ نگاروں کو بتایا کہ ’’لوگ پورے دل سے رام مندر کی تعمیر کے لیے چندہ دے رہے ہیں۔

عطیہ دہندگان کی عقیدت اتنی گہری ہے کہ انہوں نے ہمارے کھاتوں میں رقم بھیجنا جاری رکھا یہاں تک کہ جب وبائی بیماری نے پوری قوم کوبند کر دیا تھا تب بھی بھیج رہے تھے۔

گپتا نے مزید کہا- “ہمیں ان دنوں اپنے دفتر میں 50,000 سے 1 لاکھ روپے نقد مل رہے ہیں۔ لوگ چیک یا آر ٹی جی ایس اورنیفٹ کے ذریعے بھی عطیہ دیتے ہیں۔ عارضی مندر میں عقیدت مندوں کی تعداد 5,000 سے بڑھ کر 10,000 ہوگئی ہے۔”

گپتا نے کہا کہ مندر کی تعمیر کے لیے چندہ دینے کے علاوہ، عقیدت مند پوجا کے لیے عارضی مندر میں ماہانہ 40 سے 50 لاکھ روپے کی رقم بھی دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس سے قبل متنازعہ مقام پر بنائے گئے اصل عارضی مندر میں یہ تعداد 10 سے 12 لاکھ روپے تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ اب تک جمع ہونے والی کل رقم آڈٹ کے بعد ہی معلوم ہو سکے گی۔ جس پر جلد عمل کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اگرچہ رقم اتنی ہے کہ ایک عظیم الشان مندر آرام سے بنایا جائے گا۔

ٹرسٹ کا کہنا ہے کہ مندر مکمل طور پر عوامی عطیات سے تعمیر کیا جا رہا ہے۔ ایک اندازے کے مطابق مندر کی تعمیر پر 1,100 کروڑ روپے خرچ ہوں گے، باقی رقم یاتریوں کے لیے رہائش، ایک میوزیم اور ایک کانفرنس ہال کی تعمیر پر خرچ کی جائے گی۔

واضح کریں کہ حکومت ہند نے بجٹ 2022-23 میں اسکولوں میں چلائے جانے والے میڈ ڈے میل پروگرام میں مرکز (60 فیصد) کی شراکت کے طور پر 10,234 کروڑ روپے مختص کیے ہیں۔ اس کے مطابق عطیہ کی کل رقم اس اسکیم کے بجٹ کا نصف ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں